سیاسی منظر نامہ ، پی ٹی آئی کا عرصہ امتحان دراز ہو رہا ہے، نظریں عدالت پر مرکوز

01 جون ، 2022

اسلام آباد( طاہر خلیل ) بلوچستان کی شورش زدہ سرز مین سے بلدیاتی انتخابات کے پر امن انعقاد پر پارلیمانی اور عوامی حلقوں کی جانب سے الیکشن کمیشن کو اسکی شاندار کا رکردگی پر خراج تحسین پیش کیا جار ہا ہے ، صوبے کے 32 اضلاع میں بلدیاتی انتخابات کا انعقاد ایک بڑی ایکسر سائز تھی،جبکہ صوبے کے بعض علاقوں میں لا اینڈ آرڈر کے مسائل بھی موجود تھے، اس کیساتھ سیاسی منظر نامے میں تحریک انصاف کا عرصہ امتحان دراز ہو رہا ہے ، نظریں عدالت پر مرکوز ہیں ،سارا بوجھ عدالت پر ڈالا جارہا ہے کہ تحفظ کی رولنگ دیں ، استعفوں اور احتجاج کے معاملے پر پی ٹی آئی دو دھڑوں میں تقسیم دکھائی دیتی ہے ،ایک دھڑا قومی اسمبلی سے دوبارہ رجوع کرنے پر مصر اور چاہتاہے بقایا جنگ پارلیمان فرنٹ پر کی جائے دوسرا اہم معاملہ انتخابی اصلاحات سے متعلق ہے ، اگر پی ٹی آئی ایوان سے باہر ہو گی تو اسکی عدم موجودگی میں انتخابی اصلاحات سے پارٹی نقصان میں رہے گی ، دوسرا دھڑا انتہا پسند انہ سوچ اپنائے ہوئے ہے ، کو ر کمیٹی کے اجلاس میں بھی ان لوگوں نے دبائو ڈالا تھا کہ استعفے واپس نہ لئے جائیں اور ساری جنگ سڑکوں پر اور عدالتوں کے ذریعے لڑی جائے ، 131 ارکان کے استعفوں کی تصدیق کا عمل 10 جون کو مکمل ہو جائیگا تاہم وزیر قانون کا کہنا ہے کہ فواد چوہدری ،شاہ محمود قریشی اور شیریں مزاری فلور آف دی ہائوس پر مستعفی ہو چکے ہیں ۔