بلوچستان کے مختلف علاقوں میں بجلی کی طویل وغیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ جاری

30 جون ، 2022

کوئٹہ (اسٹاف رپورٹر )صوبائی دارالحکومت سمیت بلوچستان کے مختلف علاقوں میں بجلی کی غیر اعلانیہ طویل لوڈ شیڈنگ کا سلسلہ جاری ہے ، شہری شدید گرمی میں پریشانی کا شکار ہو کر رہ گئے ،تفصیلات کے مطابق شہریوں کاکہنا ہے کہ مختلف علاقوں میں 6 سے 18 گھنٹے بجلی کا غائب رہنا معمول بن گیا ہے ، گرم موسم میں گھنٹوں بجلی غائب ہونے سے ان کا برا حال ہےبجلی نہ ہونے سے گھریلو صارفین کے ساتھ ساتھ کاروباری طبقےکو بھی مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے،مختلف اضلاع میں لوڈ مینجمنٹ پلان، پی ایم ٹی میں فنی خرابی اور دیگر تکنیکی نقائص کو بنیاد بناکر 12 سے 14 گھنٹے بجلی کی فراہمی بند کردی جاتی ہے۔ کوئٹہ سمیت بلوچستان کے مختلف علاقوں میں لوڈ شیڈنگ کی وجہ سے کاروبار زندگی مفلوج ہوکررہ گیا ہے ، بجلی کی طویل لوڈ شیڈنگ کی وجہ سے لوگوں کو پریشانی کا سامنا کرنا پڑرہا ہے ،ان کاکہنا ہے کہ بلوچستان کو بجلی کی طویل بندش کا سامنا ہے اور کئی گھنٹوں تک لوڈشیڈنگ جاری رہتی ہے جبکہ درجہ حرارت میں بھی دن گزرنے کے ساتھ اضافہ ہو رہا ہے، بلوچستان کے دارالحکومت کو ئی کئی گھنٹے کی لوڈشیڈنگ کا سامنا ہے۔شہریوں کی طرف سے فون کرنے کے باوجود ایس ڈی او کسی شہری کا فون نہیں سنتے اور ان کی بجلی کے متعلق شکایات کا ازالہ نہیں ہورہا دفتر میں بجلی بندش کی شکایت کے باوجود تمام سب ڈوثیرن کا عملہ اپنی مرضی سے جاتا ہے اس صورتحال پر شہری سراپا احتجاج بن گئےہیں ،ان کاکہنا ہےکہ گرمی کی شدت میں اضافہ کے ساتھ ہی بجلی کی غیر اعلانیہ اور طویل دورانیہ لوڈ شیڈنگ کا سلسلہ اپنے عروج پر پہنچ چکا ہے ہر 2گھنٹے کے بعد مسلسل 2،3گھنٹے کی لوڈ شیڈنگ نے شہریوں کو بے حال کر دیا ہے شہر کے مختلف علاقوں میں 6 سے 18 گھنٹے بجلی کا غائب رہنا معمول بن گیا ہے ،، ا گھنٹوں بجلی غائب ہونے سے شہری شدید پریشان ہیں۔طویل لوڈ شیڈنگ سے کاروباری طبقہ اور تاجر برادری مشکلات کا شکار ہے ،ذرائع کا مزید کہنا ہے کہ ملک کے مختلف شہروں اور ہائی لاسز والے علاقوں میں 10 سے 14 گھنٹے تک لوڈ شیڈنگ کی جارہی ہے جبکہ زیادہ نقصانات والے علاقوں میں لوڈشیڈنگ کا دورانیہ اس سے بھی زیادہ ہے۔