ایس اینڈ پی نے پاکستان کا کریڈٹ آؤٹ لک منفی کردیا، بلوم برگ

29 جولائی ، 2022

کراچی (نیوز ڈیسک) بلوم برگ کا کہنا ہے کہ ایس اینڈ پی نے پاکستان کا کریڈٹ آؤٹ لک منفی کر دیا،اسٹیٹ بینک کے قائم مقام سربراہ کا کہنا ہے کہ ملک اپنی موجودہ مشکلات سے بچنے کے لیے پوری طرح لیس ہے۔ تفصیلات کے مطابق بلوم برگ کا کہنا ہے کہ ایس اینڈ پی گلوبل ریٹنگز نے پاکستان کے کریڈٹ آؤٹ لک کو غیر جانبدار سے منفی کر دیا جیسا کہ اجناس کی اونچی قیمتوں، روپے کی قدر میں گراوٹ اور عالمی مالیاتی حالات سخت ہونے سے ملک کی بیرونی پوزیشن کمزور ہوجاتی ہے۔ بلوم برگ کے مطابق ایس اینڈ پی کا ایک بیان میں کہنا تھا کہ اگر دوطرفہ اور کثیر جہتی قرض دہندگان کی حمایت تیزی سے ختم ہوجاتی ہے یا اگر قابل استعمال غیر ملکی زرمبادلہ کے ذخائر مزید کم ہوجائیں تو قوم کی مزید تنزلی ہوسکتی ہے۔ کمپنی نے ایکواڈور اور انگولا کے برابر منفی بی پر ملک کی درجہ بندی کی بھی توثیق کی۔ پاکستانی روپیہ اس سال ڈالر کے مقابلے میں اپنی قدر کا 30 فیصد سے زیادہ کھو چکا ہے۔موڈیز انویسٹرز سروس اور فچ ریٹنگز پہلے ہی ملک کے بارے میں منفی نقطہ نظر رکھتے ہیں۔ بین الاقوامی مالیاتی فنڈ (آئی ایم ایف) کے ایک سابق ملازم، جو اب پاکستان کے مرکزی بینک کے قائم مقام سربراہ کے طور پر خدمات انجام دے رہے ہیں، سید کا ماننا ہے کہ ملک اپنی موجودہ مشکلات سے بچنے کے لیے پوری طرح لیس ہے۔ یہ صرف سست مارکیٹوں کی انفرادی ممالک کے حالات کے بارے میں ایک اہم نقطہ نظر لینے کے لئے تیار نہ ہونے کی وجہ سے ہے کہ پاکستان خود کو دیگر زیادہ خطرے سے دوچار معیشتوں کے ساتھ پاتا ہے۔