بھارت پھر فالس فلیگ آپریشن کا ڈرامہ کر سکتا ہے عالمی برادری نوٹس لے، دفتر خارجہ

14 جنوری ، 2022

اسلام آباد(نامہ نگار خصوصی)دفترخارجہ نے خبردار کیا ہے کہ بھارت ایک بار پھر فالس فلیگ آپریشن کا ڈرامہ رچاسکتا ہے، عالمی برادری بھارتی عزائم کا نوٹس لےاورمسئلہ کشمیر اقوام متحدہ کی قراردادوں اور کشمیر کے لوگوں کی خواہشات کے مطابق حل کرنے کیلئے کردار کرے، پاکستان مقبوضہ جموں و کشمیر کی سنگین صورت حال کو اجاگر کرتا رہے گا، مودی سرکار بھارت میں مسلمانوں کی نسل کشی بند کرے، ترجمان دفترخارجہ عاصم افتخار احمد نے ہفتہ وار بریفنگ کے دوران کہا کہ پاکستان نے بھارتی فوج کے سربراہ کے اس بیان کو یکسر مسترد کر دیا ہے جس میں انہوں نے کنٹرول لائن کے پار نام نہاد لانچ پیڈز اور تربیتی کیمپوں کی موجودگی کا دعویٰ کیا تھا۔ترجمان کا کہنا تھا کہ بھارتی فوج کے سربراہ کے بے بنیاد الزامات میں کوئی نئی بات نہیں بلکہ یہ بھارت میں بھارتیہ جنتا پارٹی اور راشٹریہ سوائم سیوک سنگھ کے گٹھ جوڑ کی طرف سے پاکستان مخالف مذموم پروپیگنڈے کا حصہ ہے۔انہوں نے کہا کہ بھارتی حکومت اپنے جنگی جنون پر مبنی توسیعی پسندانہ ایجنڈے کو آگے بڑھا رہی ہے جس میں اکھنڈ بھارت کا پرفریب تصور شامل ہے اور یہ علاقائی امن کیلئے سنگین خطرہ ہے۔ بھارتی فوج کے سربراہ نے غیرقانونی زیرقبضہ جموں و کشمیر میں جاری بھارتی ریاستی دہشتگردی اور انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں سے عالمی توجہ ہٹانے کی مذموم کوشش ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کشمیریوں کو ان کا حق خود ارادیت کے حصول تک مکمل حمایت جاری رکھے گا، رواں برس کے آغاز سے اب تک 15 کشمیریوں کو ماورائے قانون قتل کی جعلی کارروائیوں میں نشانہ بنایا گیا ہے، اسی طرح 2021 میں 210 کشمیریوں کو قتل کیا گیا۔ان کا کہنا تھا کہ بھارت بدقسمتی سے صحافیوں اور انسانی حقوق کے کارکنوں کو بھی نشانہ بنا رہا ہے۔ ہمیں تشویش ہے اور مسلسل عالمی برادری کو بھارت کے ٹریک ریکارڈ سے بھی خبردار کر رہے ہیں اور یہ حقیقی امکان ہے کہ بھارت صورت حال سے توجہ ہٹانے کیلئے ایک اور فلیگ آپریشن کرسکتا ہے، اسی لیے ہم عالمی برداری میں موجود اپنے دوستوں کو اس حوالے سے مسلسل خبردار کر رہے ہیں۔دریں اثناپاکستان نے جوہری جنگ کی روک تھام اور ہتھیاروں کی دوڑ سے بچنے سے متعلق سلامتی کونسل کے پانچ مستقل ارکان (پی فائیو) کی جانب سے مشترکہ بیان کا خیر مقدم کرتے ہوئے اسے مثبت پیش رفت قرار دیا ہے اور کہا ہے کہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے مستقل ارکان کے درمیان یہ مفاہمت عالمی اور علاقائی سطح پر تزویراتی استحکام کیلئے ٹھوس اقدامات کی راہ ہموار کر سکتی ہے۔جمعرات کو ترجمان دفتر خارجہ کے مطابق ایک ذمہ دار جوہری ہتھیاروں کی حامل ریاست کے طور پر پاکستان اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے تخفیف اسلحہ سے متعلق پہلے خصوصی اجلاس (ایس ایس او ڈی-I) کی شرائط کے مطابق عالمی اور غیر امتیازی جوہری تخفیف اسلحہ اور عدم پھیلاؤ کے مقاصد کی حمایت کرتا ہے۔