قلندرز کی چیمپئنز والی کارکردگی، سپر لیگ فائنل میں رسائی، ٹائٹل کیلئے آج سلطانز سے مقابلہ

18 مارچ ، 2023

کراچی(عبدالماجدبھٹی،نمائندہ خصوصی) لاہور قلندرز نے چیمپئن والی کارکردگی دکھاتے ہوئے پشاور زلمی کا پانچویں بار پی ایس ایل فائنل کھیلنے کا خواب بکھیر دیا۔ قلندرز نے دوسرا ایلی منیٹر چار وکٹ سے جیت کر فائنل میں جگہ بنالی ۔ شاہین شاہ آفریدی نے وننگ اسٹروک چھکا مارکر کھیلا۔ میچ کا فیصلہ سات گیندیں پہلے ہوا۔ قلندرز نے چھ وکٹ پر176 رنز بنائے۔ شاہین 11اور ڈیوڈ ویزے 9رنز بناکر ناٹ آئوٹ رہے۔ جمعے کی شب قذافی اسٹیڈیم لاہور میں غیر معروف مرزا طاہر بیگ بڑے میچ میں ہیرو بن کر سامنے آئے۔ پی ڈی پی سے منظر عام پر آنے والے 24 سالہ طاہر بیگ نے مشکل صورتحال میں42گیندوں پر54رنز کی اننگز کھیلی ۔ مسلسل دوسرے سال پاکستان سپر لیگ کا فائنل لاہور قلندرز اور ملتان سلطانز کے درمیان کھیلا جائے گا۔ فاتح دوسری بار چیمپئن بنے گی۔ تاہم قلندرز اعزاز کا دفاع کرنے والی پہلی ٹیم بن سکتی ہے۔ چیمپئن ٹیم کو خوبصورت ٹرافی کے علاوہ 12کروڑ روپے کی خطیر انعامی رقم ملے گی۔ رنرز اپ کو چار کروڑ 80لاکھ روپے ملیں گے۔ ہدف کے تعاقب میں لاہور قلندرز کی اننگز کا آغاز اچھا نہ ہوسکا۔ فخر زمان چھ رنز کے مہمان ٹھہرے انہیں عظمت اللہ عمرزئی نے بولڈ کیا۔ پہلا ٹی ٹوئنٹی کھیلنے والے احسن بھٹی نےچند اچھے شاٹس لیکن وہ دس گیندوں پر15رنز بناکر وہاب ریاض کی گیند پر کیچ ہوگئے۔ عبداللہ شفیق غیر ضروری رن لینے کی کوشش میں دس رنز بناکر رن آئوٹ ہوگئے۔ آخری دس اوورز میں91رنز کی ضرورت تھی۔ مرزا طاہر بیگ نے ٹورنامنٹ میں پہلی نصف سنچری 41گیندوں پر دو چھکوں اورسات چوکوں کی مدد سے مکمل کی۔ وہ 54رنز بناکر عامر جمال کی گیند پر کاٹ بی ہائینڈ ہوئے۔ سیم بلنگز21گیندوں پر28رنز بناکر سلمان ارشاد کی گیند پر بولڈ ہوئے اس وقت جیت کا فاصلہ25رنز تھا۔ سکندر رضا ایک کیچ ڈراپ ہونے کے باوجود22رنز بناکر عمرزئی کی گیند پر بولڈ ہوگئے۔ پشاور زلمی کے محمد حارث 18ویں اوور کی آخری گیند پر اونچا شاٹ کھیلنے کی کوشش میں کیچ ہوئے ، انہوں نے 54 گیندوں پر 11 چوکوں اور 2 چھکوں کی مدد سے 85 رنز کی اننگز کھیلی تھی۔ دوسرے ایلیمنیٹر میں پشاور زلمی کے کپتان بابراعظم نے لاہور قلندرز کے خلاف ٹاس جیت کر بیٹنگ کا فیصلہ کیا اور پانچ وکٹ پر171رنز بنائے۔ صائم ایوب نے جارحانہ آغاز ضرور کیا تھا لیکن دوسرے اوور میں ہی 2 چوکوں کی مدد سے 9 رنز بنا کر زمان خان کی گیند پر بولڈ ہوگئے۔ بابراعظم اور محمد حارث نے ٹیم کی سنچری مکمل کی۔ بابر نے اننگز کے 10 ویں اوور میں چوکے ساتھ محمد رضوان سے حنیف محمد کیپ کا اعزاز چھین لیا۔ بابر اعظم نے 36 گیندوں پر 7 چوکوں کی مدد سے 42 رنز بنائے ۔ بابر اعظم کا39رنز پر کیچ ڈراپ ہوا لیکن وہ اس سے فائدہ نہ اٹھاسکے اور ٹی ٹوئنٹی میں چھٹی بار راشد خان کا شکار بنے۔ وہ ایک بار ٹی ٹوئنٹی انٹر نیشنل اور پانچ بار لیگ میچز میں انکا نشانہ بنے۔ بابر اعظم نے محمد حارث کے ساتھ60گیندوں پر89رنز کی شراکت قائم کی۔ ٹام کوہلر دو گیندوں کا سامنا کرنے کے بعد کھاتہ کھولے بغیر چلتے بنے۔ چوتھی وکٹ کی شراکت میں محمد حارث اور بھانوکا راجا پکسا نے 49 رنز کا اضافہ کیا۔ زمان خان نے20اور راشد خان نے42رنز دے کر دو دو وکٹ حاصل کئے۔ شاہین شاہ آفریدی نے چار اوورز میں41رنز دے کر ایک وکٹ حاصل کی۔