حسابات جاریہ کے کھاتوں کے خسارےمیں68فیصد کی کمی

01 اپریل ، 2023

اسلام آباد (اے پی پی) حسابات جاریہ کے کھاتوں کے خسارہ میں جاری مالی سال کے دوران سالانہ بنیادوں پر68 فیصد کی کمی جبکہ ایف بی آر کے محاصل میں سالانی بنیادوں پر 18.2 فیصدکی نموریکارڈکی گئی۔ وزارت خزانہ کی جانب سے جاری کردہ ماہانہ اقتصادی اپ ڈیٹ کے مطابق جاری مالی سال کے پہلے 8 ماہ میں سمندرپار پاکستانیوں نے 18 ارب ڈالرکازرمبادلہ ملک ارسال کیاجوگزشتہ مالی سال کی اسی مدت کے مقابلہ میں 10.9 فیصدکم ہے، گزشتہ مالی سال کی اسی مدت میں سمندرپارپاکستانیوں نے 20.2 ارب ڈالر کا زرمبادلہ ملک ارسال کیاتھا،اس مدت میں ملکی برآمدات کاحجم 18.6 ارب ڈالررہا جوگزشتہ مالی سال کی اسی مدت کے مقابلہ میں 9.7 فیصدکم ہے، گزشتہ مالی سال کی اسی مدت میں ملکی برآمدات کاحجم 20.6 ارب ڈالرریکارڈکیاگیاتھا، اس کے برعکس درآمدات میں سالانہ بنیادوں پر21 فیصدکی نمایاں کمی ہوئی۔ جولائی سے فروری تک ملکی درآمدات کاحجم 37.4 ارب ڈالرریکارڈکیاگیا جوگزشتہ مالی سال کی اسی مدت میں 47.3 ارب ڈالرتھا، اعدادوشمار کے مطابق جاری مالی سال کے پہلے 8 ماہ میں حسابات جاریہ کے کھاتوں کے خسارہ میں سالانہ بنیادوں پر68 فیصدکی نمایاں کمی ہوئی، اس مدت میں حسابات جاریہ کے کھاتوں کاخسارہ 3.9 ارب ڈالرریکارڈکیاگیا جو گزشتہ مالی سال کی اسی مدت میں 12.1 ارب ڈالرتھا، براہ راست غیرملکی سرمایہ کاری میں اس کے مدت کے دوران سالانہ بنیادوں پر40.4 فیصدکی کمی ہوئی، اس مدت میں براہ راست غیرملکی سرمایہ کاری کاحجم 784.4 ملین ڈالرریکارڈکیاگیا جوگزشتہ مالی سال کی اسی مدت میں 1.3 ارب ڈالرتھا،29 مارچ 2023 کو زرمبادلہ کے ذخائرکاحجم 5.595 ارب ڈالرریکارکیاگیا جوگزشتہ سال کی اسی تاریخ کو6.52 ارب ڈالرتھا. اعداد وشمارکے مطابق اس مدت میں ایف بی آر کے محاصل میں سالانہ بنیادوں پر18.2 فیصدکی نموریکارڈکی گئی، جولائی سے جنوری تک ایف بی آر نے 4493 ارب روپے کی محصولات اکھٹاکیں جوگزشتہ مالی سال کی اسی مدت میں 3802 ارب ڈالرتھیں۔