چین کی اسرائیل، فلسطین امن مذاکرات میں ثالثی کی پیشکش، سعودی وزیر خارجہ کی دمشق آمد، شامی صدر سے ملاقات

19 اپریل ، 2023

کراچی (نیوز ڈیسک) چین نے اسرائیل فلسطین امن مذاکرات میں ثالثی کی پیشکش کردی ہے،چینی وزیرخارجہ کن گانگ نےاپنے اسرائیلی اور فلسطینی ہم منصبوں کیساتھ علیحدہ علیحدہ ٹیلی فونک گفتگو کی اور کہا کہ چین فریقین کے درمیان امن مذاکرات میں سہولت فراہم کرنے کے لئے تیار ہے،انہوں نے فریقین میں جاری کشیدگی پر اظہار تشویش کیا اور کہا کہ ان کی اولین ترجیح تنازع کو بڑھنے یا بے قابو ہونے سے روکنا ہے ، دوسری جانب سعودی عرب کے وزیر خارجہ شہزادہ فیصل بن فرحان نے شام کے دارالحکومت دمشق پہنچے ہیں،انہوں نے شامی صدر بشارالاسد سے ملاقات کی ہے، سعودی وزارت خارجہ کا کہنا ہے کہ سعودی عرب شام کے بحران کے ایسے حل کا حامی ہے جو اس کے اتحاد، سلامتی، استحکام اور اس کی عرب شناخت کو برقرار رکھے اور اسے اس کے عرب ماحول میں اس طرح بحال کرے جس سے اس کے برادرعوام کی فلاح وبہبود میں مدد ملے ۔تفصیلات کے مطابق چین کے وزیر خارجہ کِن گانگ نے پیر کو اپنے اسرائیلی اور فلسطینی ہم منصبوں کو بتایا کہ چین اسرائیل اور فلسطین کے درمیان امن مذاکرات میں سہولت فراہم کرنے کے لئے تیار ہے، چینی خبر رساں ادارے نے بتایا کہ کِن گانگ نے کہا ہے کہ "چین اسرائیل اور فلسطین دونوں کی حوصلہ افزائی کرتا ہے کہ وہ سیاسی جرات کا مظاہرہ کریں اور امن مذاکرات دوبارہ شروع کرنے کے لئے اقدامات کریں، چین اس میں سہولت فراہم کرنے کے لیے تیار ہے" ۔کن گانگ نے اپنے اسرائیلی ہم منصب ایلی کوہن سے ٹیلفونک گفتگو میں کہا ہے کہ چین اسرائیل اور فلسطین کے درمیان موجودہ کشیدگی پر فکر مند ہے۔ چین کی اولین ترجیح صورت حال کو کنٹرول میں لانا اور تنازع کو بڑھنے یا کنٹرول سے باہر ہونے سے روکنا ہے۔چینی وزیر نے فریقین پر زور دیا کہ وہ پرسکون رہیں۔ تحمل سے کام لیں اور اشتعال انگیز بیانات یا اقدامات سے گریز کریں۔ انہوں نے زور دیا کہ تنازع کے حل کی کلید امن مذاکرات کا دوبارہ آغاز اور دو ریاستی حل پر عمل درآمد کرنے میں ہے۔چینی وزیر خارجہ نے گزشتہ ماہ اعلان کردہ سعودی عرب اور ایران کے درمیان تعلقات کو معمول پر لانے کے لیے معاہدے میں چین کے کردار کی طرف بھی اشارہ کیا اور کہا کہ سعودی عرب اور ایران نے حال ہی میں بات چیت کے ذریعے سفارتی تعلقات بحال کئے ہیں جو بات چیت کے ذریعے اختلافات پر قابو پانے کی ایک اچھی مثال ہے۔دوسری جانب سعودی وزارتِ خارجہ نے ایک بیان میں کہا ہے کہ شہزادہ فیصل کا دورہ شام کے بحران کے سیاسی حل تک پہنچنے کی سعودی عرب کی خواہش اور دلچسپی کے دائرے میں آتا ہے۔بیان میں مزیدکہا گیا ہے کہ شہزادہ فیصل کا ایئرپورٹ پراستقبال وزیرایوان صدر منصور عزام نے کیا۔وہ یہ دورہ شامی وزیرخارجہ ڈاکٹر فیصل المقداد کے سعودی عرب کے دورے کے چند روز بعد کررہے ہیں۔