سپریم کورٹ الیکشن کا حکم واپس لے ملک بھر میں ایک ساتھ انتخابات کرائے جائیں عدالت عظمٰی میں وزارت دفاع کی سربمہردرخواست جمع

19 اپریل ، 2023

اسلام آباد (نیوز ایجنسیاں، ٹی وی رپورٹ) وزارت دفاع نے سپریم کورٹ سے پنجاب میں الیکشن کا حکم واپس لینے اور ملک بھر میں ایک ساتھ الیکشن کرانے کی استدعا کردی، عدالت سیکورٹی صورتحال کے پیش نظر پنجاب میں انتخابات کیلئے 4اپریل کا اپنا فیصلہ واپس لے، سندھ اور بلوچستان اسمبلی کی مدت مکمل ہونے پر الیکشن کا حکم دے، الیکشن کمیشن نے بھی سپریم کورٹ میں رپورٹ جمع کرا دی، جس میں عدالت کو آگاہ کردیا ہے کہ انتخابات کیلئے فنڈز نہیں مل سکے، مرحلہ وار انتخابات سے انارکی پھیلے گی، سیکورٹی صورتحال ابتر ہے تشدد میں اضافہ اور اخراجات بڑھ سکتے ہیں، دریں اثناء وزیر دفاع خواجہ آصف نے چیف جسٹس عمر عطا بندیال سے اعلیٰ فوجی حکام کی چیمبر میں ملاقات کی تصدیق کر دی ہے، ججز کو بتایا گیا کہ بڑی تعداد میں سیکورٹی اہلکار بار بار الیکشن کیلئے موبلائز نہیں کر سکتے،ملک میں الیکشن ایک دن کروائے جائیں، پنجاب میں پہلے الیکشن ہوئے تو قومی اسمبلی الیکشن نتائج پر اثرپڑیگا۔ تفصیلات کے مطابق وزارت دفاع نے سربمہر درخواست سپریم کورٹ میں جمع کروا دی۔ وزارت دفاع کی جانب سے عدالت عظمیٰ سے انتخابات کا حکم واپس لینے کی استدعا کی گئی ہے جبکہ ملک بھر میں ایک ساتھ انتخابات کرانے کی درخواست کی گئی ہے۔ وزارت دفاع نے اپنی درخواست میں مؤقف اختیار کیا کہ دہشت گردوں اور شرپسندوں کی جانب سے انتخابی مہم پر حملوں کا خدشہ ہے، قومی،بلوچستان اور سندھ اسمبلیوں کی مدت پوری ہونے پر ہی انتخابات کرائے جائیں۔ اس سے قبل الیکشن کمیشن نے سپریم کورٹ کو فنڈ نہ ملنے سمیت ساری صورتحال سے آگاہ کرتے ہوئے رپورٹ سپریم کورٹ رجسٹرار کو جمع کرادی جبکہ اسٹیٹ بینک نے بھی اپنی رپورٹ جمع کرادی، جس میں الیکشن کمیشن کو رقم منتقل نہ کرنے کی وجوہات بیان کی گئیں ہیں۔ اسٹیٹ بینک نے سپریم کورٹ رجسٹرار میں جمع کرائے گئے جواب میں کہا کہ حکومت نے پارلیمنٹ ایکٹ کے تحت اسٹیٹ بینک کو فنڈ کے اجرا سے روکا ہے۔ علاوہ ازیں وزارت خزانہ نے بھی اپنی رپورٹ اٹارنی جنرل آفس کے ذریعے جمع کرائی۔ جس میں وفاقی کابینہ کے فیصلے اور پارلیمان کو معاملہ بھجوانے کی تفصیلات شامل کی گئیں ہیں۔ وزارت خزانہ کی رپورٹ میں عدالتی حکم پر اسٹیٹ بینک کو فراہم کردہ معاونت کے بارے میں بھی آگاہ کیا گیا جبکہ فنڈز منتقلی پر قانونی پہلوؤں کو بھی اجاگر کیا گیا ہے۔رجسٹرار آفس میں جمع کرائی گئی رپورٹس ججز کو چیمبر میں بھیجی جائیں گی۔ علاوہ ازیں الیکشن کمیشن نے پنجاب میں انتخابات کیلئے فنڈز کی فراہمی کے حوالے سے رپورٹ سپریم کورٹ میں جمع کرادی۔ ذرائع کے مطابق الیکشن کمیشن نے سپریم کورٹ کو آگاہ کردیا ہے کہ انتخابات کیلئے فنڈز نہیں مل سکے۔ذرائع کے مطابق الیکشن کمیشن نے رپورٹ میں کہا ہے کہ اسٹیٹ بینک کی طرف سے رقم منتقلی نہیں کی گئی۔علاوہ ازیں پنجاب میں 14 مئی کو انتخابات کیلئے سکیورٹی کی فراہمی کے معاملے پر انٹیلی جنس ایجنسیوں کے سربراہان نے چیف جسٹس سمیت دیگر ججز سے ملاقات کی۔ ذرائع کے مطابق چیف جسٹس پاکستان سمیت دیگر ججز اور انٹیلی جنس ایجنسیوں کے سربراہان کے درمیان ملاقات میں ڈی جی ملٹری آپریشنز اور سیکرٹری دفاع بھی شامل تھے۔ ذرائع کا کہنا ہےکہ گزشتہ روز ہونے والی ملاقات چیف جسٹس کے چیمبرمیں 3 گھنٹے سے زائد جاری رہی جس میں جسٹس اعجازالاحسن اورجسٹس منیب اختربھی چیف جسٹس کے چیمبر میں موجود تھے جب کہ اس ملاقات میں ملکی سکیورٹی صورتحال کے بارے آگاہ کیا گیا۔دوسری جانب جیو نیوز کے پروگرام ’’آج شاہزیب خانزاد کے ساتھ‘‘ میں گفتگو کرتے ہوئے وزیردفاع خواجہ آصف نے اعلیٰ فوجی حکام کی سپریم کورٹ کے 3 رکنی بینچ کو بریفنگ کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ ججز کو بتایا گیا سیکیورٹی اہلکار باربار الیکشن کیلیے موبیلائز نہیں کرسکتے،ملک میں الیکشن ایک دن کروائے جائیں۔