مذاکرات میں جو طے ہوگا اتحادیوں سے منظوری لینا ہوگی، رانا ثناء اللہ

29 اپریل ، 2023

کراچی(ٹی وی رپورٹ)جیو نیوز کے پروگرام ”نیا پاکستان شہزاد اقبال کے ساتھ“ میں گفتگو کرتے ہوئے وفاقی وزیر داخلہ رانا ثناء اللہ نے کہا ہے کہ وقت سے پہلے تین اسمبلیاں توڑنے کا جواز نہیں بنتا، منگل کو مذاکرات میں جو طے ہوگا اس کی پھر اتحادیوں سے منظوری لینا ہوگی ,بجٹ موجودہ حکومت پیش کرے یا نگراں حکومت اس پر درمیانی راستہ نکل سکتا ہے ، صوبائی وزیر سعید غنی نے کہا کہ مردم شماری کے عمل میں شفافیت لائی جائے، پروگرام میں سینئر صحافی و تجزیہ کار محمد مالک نے بھی اظہار خیال کیا۔ وفاقی وزیر داخلہ رانا ثناء اللہ نے کہا کہ قومی اسمبلی میں سوچ ہے کہ اسمبلی کو اپنی مدت پوری کرنی چاہئے، ہمارے پاس سندھ اور بلوچستان اسمبلیوں کو وقت سے پہلے تحلیل کرنے کا اختیار نہیں ہے، صوبائی اسمبلیاں 13 اگست کو اپنی مدت پوری کررہی ہیں، اگست میں نگراں حکومتیں آتی ہیں تو الیکشن اکتوبر میں بنتے ہیں، عمران خان نے دو اسمبلیاں توڑ کر حماقت کی ہے، عمران خان کا فیصلہ ضد، انا اور دھونس پر مبنی تھا، وقت سے پہلے تین اسمبلیاں توڑنے کا جواز نہیں بنتا ہے۔ رانا ثناء اللہ کا کہنا تھا کہ مذاکراتی ٹیمیں مثبت نتیجے پر پہنچ جاتی ہیں تو سب کوقبول کرنا چاہئے، مذاکراتی ٹیمیں اپنی اپنی پارٹی کے سربراہوں سے منظوری لیں گی، منگل کو حتمی نتیجے پر پہنچ گئے تب بھی پارٹی سربراہان سے منظوری کے بغیر فائنل نہیں کرسکتے، منگل کو مذاکرات میں جو طے ہوگا اسکی پھر اتحادیوں سے منظوری لینا ہوگی، اسحاق ڈار کو معلوم ہے مذاکرات کی منظوری اتحادی پارٹی سربراہان کے فورم سے لی گئی ہے۔ رانا ثناء اللہ نے کہا کہ خیبرپختونخوا میں انتخابات آٹھ اکتوبر کو ہونا طے ہے یہی ٹھیک ہے، صرف پنجاب میں وقت سے پہلے الیکشن کرانے پر ڈیڈ لاک ہوسکتا ہے، اس پر حکومت اور پی ٹی آئی کو لچک دکھاتے ہوئے آئینی راستہ اختیار کرنا ہوگا، بجٹ موجودہ حکومت پیش کرے یا نگراں حکومت اس پر درمیانی راستہ نکل سکتا ہے۔ پی ٹی آئی کارکنوں کی گرفتاری سے متعلق رانا ثناء اللہ کا کہنا تھا کہ پولیس نے جب دیکھا کہ کچھ لوگوں نے قانون ہاتھ میں لیا تو انہیں گرفتار کرلیا، وزیرقانون اور وزیرخزانہ نے مذاکراتی ٹیم کی موجودگی میں مجھے فون کیا، میں نے انہیں بتایا کہ کن وجوہات پر پی ٹی آئی کارکنوں کو گرفتار کیا گیا ہے، آئی جی اسلام آباد نے مجھے بتایا کہ ابھی ایف آئی آر درج نہیں ہوئی، مذاکراتی ٹیم نے مجھے پی ٹی آئی کارکنوں کو رہا کرانے کیلئے کہا، میں نے آئی جی کو کہا کہ تحریک انصاف کے کارکنوں کو رہا کردیں، آئی جی نے کہا پی ٹی آئی کوئی بندہ بھیج دے جس کے حوالے کارکنوں کو کردیا جائے، میں نے فواد چوہدری کے بھائی فیصل چوہدری کو بھجوانے کیلئے کہا جس کے بعد ان کی رہائی ہوئی، یہ سب باتیں فواد چوہدری کے علم میں ہیں پھر بھی وہ الزام تراشی کررہے ہیں۔ رانا ثناء اللہ نے کہا کہ پی ٹی آئی نے جوڈیشل کمپلیکس میں جلاؤ گھیراؤ کیا تو 450افراد کو گرفتار کیا جس میں 350افراد کی شناخت ہوچکی ہے، یہی وجہ ہے عمران خان کی پیشی پر تین چار سو لوگ نہیں تیس اکتیس لوگ آتے ہیں، پنجاب اور کے پی اسمبلیاں بحال ہونا قانونی طور پر ممکن نہیں لیکن عدالت فیصلہ کرسکتی ہے، پرویز الٰہی نے اپنی دو ڈھائی ماہ کی حکومت میں بوریاں بھر بھر کر جہازوں میں ڈالر باہر بھیجے، پرویز الٰہی نے ڈالر باہر بھیجنے میں فرح گوگی کا بھی ریکارڈ توڑ دیا ہے، پہلے فرح گوگی پیسے باہر بھیجتی رہی پھر پرویز الٰہی نے یہ کام کیا ہے۔ صوبائی وزیر سعید غنی نے کہا کہ مردم شماری سے متعلق دیگر جماعتوں سے زیادہ ہم آواز اٹھارہے ہیں، مردم شماری کے عمل میں شفافیت لائی جائے تاکہ یہ عمل متنازع نہ بن سکے، یہ تاثر غلط ہے کہ سندھ میں مردم شماری صوبائی حکومت کروارہی ہے، پاکستان بیورو آف اسٹیٹسٹکس نے مردم شماری کیلئے سندھ کے محکموں سے عملہ لیا ہے، یہ تمام عملہ مردم شماری کیلئے تمام ہدایات پی بی ایس سے لے رہا تھا۔ سعید غنی کا کہنا تھا کہ ہمارا موقف ہے کہ سندھ کی آبادی صحیح گنی جائے، مردم شماری میں پاکستان کے تمام بڑے شہروں کی گروتھ نیگیٹو آرہی ہے جو درست عکاسی نہیں ہے، ایم کیو ایم جو باتیں آج کررہی ہے ہم پہلے سے اس پرآواز اٹھارہے ہیں، ایم کیو ایم ہم پر الزامات لگا کر سیاسی فائدہ حاصل کرنا چاہتی ہے، کراچی میں مردم شماری کیلئے بلاکس بنائے گئے تو سب سے پہلے میں نے اعتراض اٹھایا تھا، مردم شماری میں کراچی کے تمام مکانات کو گنا جانا چاہئے۔