سینیگال، حزب اختلاف کے رہنما کو نوجوانوں کو بداخلاق بنانے کے الزام میں سزا

02 جون ، 2023

ڈاکار (اے ایف پی) سینیگال کی ایک عدالت نے گزشتہ روز 2024کے صدارتی انتخابات کے امیدوار اپوزیشن رہنما عثمانی سونوکو کو ’نوجوانوں کو بداخلاق‘ بنانے کے الزام میں دو سال قید کی سزا سنا دی،تاہم انہیں جنسی زیادتی اور جان سے مارنے کی دھمکیاں دینے کے الزام سے بری کر دیا۔عدالت نےعثمانی سونکو کے شریک ملزم بیوٹی سیلون کے مالک ندئے کھڈی ندائے کو بھی دو سال قید کی سزا سنائی، جہاں عثمانی سونوکو پر ایک ملازم کے ساتھ بدسلوکی کا الزام لگایا گیا تھا۔دو سال پرانے کیس نے مغربی افریقی ریاست میں گہری سیاسی تقسیم پیدا کی اور پرتشدد مظاہروں کو جنم دیا ، جس نے دنیا میں ملکی استحکام کی ساکھ کو نقصان پہنچایا ۔اس کیس کے حوالے سے زیادہ توجہ اس بات پر ہے کہ آیا عثمانی سونوکو کو اگر مجرم ٹھہرایا جاتا ہے، تو انہیں تکنیکی طور پر آئندہ سال ہونے والے انتخابات میں حصہ لینے سے روک دیا جائے گا۔اگر عثمانی سونوکو کو جنسی زیادتی جیسے جرم میں غیر حاضری میں سزا سنائی جاتی، تو اس سے ان کے انتخابی حقوق چھین لیے جاتے۔اس کے باوجود، سینیگال کے انتخابی ضابطہ کے مطابق، ان کی سزا سے ان کی اہلیت کو خطرہ لاحق ہے۔