پی آئی اے کے آپریٹنگ ریونیو میں 99اعشاریہ 6فیصد اضافہ ریکارڈ

09 جون ، 2023

اسلام آباد (رپورٹ:حنیف خالد) پی آئی اے آپریٹنگ ریونیو میں 99اعشاریہ 6فیصد اضافہ ریکارڈ ہوا ۔سی پیک کے تحت بلوچستان میں 657کلومیٹر چار اہم شاہراہوں کی تعمیر تیزی سے جاری ہے پورٹ قاسم درآمدی 27فیصد‘ برآمدی کارگو میں 15فیصد کمی‘ کراچی پورٹ کارگو میں 20فیصد کمی رہی ،اقتصادی جائزے کے مطابق پی آئی اے کے پاس اس وقت 35جہاز ہیں۔ کیلنڈر سال 2022ء کے دوران پی آئی اے کے آپریٹنگ ریونیو میں 99اعشاریہ 6فیصد کا اضافہ ہوا ہے اور یہ سال 2021ء کے 86ارب 18کروڑ 50لاکھ روپے کے مقابلے میں 172ارب تین کروڑ 80لاکھ روپے تک پہنچ گیا ہے۔ اس دوران آپریٹنگ اخراجات میں 81اعشاریہ 2فیصد اضافہ ہوا۔ سالانہ ترقیاتی بجٹ 2022-23ء میں این ایچ اے کے 115منصوبوں کیلئے 118ارب چالیس کروڑ 34لاکھ روپے مختص کئے گئے۔ سی پیک کے تحت کئی منصوبے جیسے ژوب اچلاک 298کلو میٹر طویل شاہراہ‘ خضدار بسیما 110کلومیٹر شاہراہ‘ نوکنڈی ماشی خیل 103کلو میٹر طویل شاہراہ اور خوشاب آوران ایم ایٹ 146کلو میٹر شاہراہ زیر تعمیر ہے۔ رواں مالی سال کے پہلے 9ماہ کے دوران جولائی تا مارچ پاکستان ریلوے کی آمدنی 39ارب 95کروڑ روپے رہی جو گزشتہ مالی سال کے اسی عرصہ کے دوران 43ارب 73کروڑ رہی۔ ٹیکس کٹوتی کے بعد پاکستان نیشنل شپنگ کارپوریشن کے منافع میں 879فیصد اضافہ ہوا‘ اور یہ رواں مالی سال کے پہلے 9ماہ کے دوران بڑھ کر 23ارب 95کروڑ ساٹھ لاکھ روپے رہا جو گزشتہ مالی سال کے اسی عرصہ کے دوران 2ارب چوالیس کروڑ 60لاکھ روپے تھا۔ پورٹ قاسم درآمدی کارگو میں 27فیصد کی کمی ہوئی اور یہ گزشتہ مالی سال کے 3کروڑ 57لاکھ کے مقابلے میں کم ہو کر 2کروڑ 61لاکھ ٹن رہیں۔ رواں مالی سال کے پہلے 9ماہ جولائی تا مارچ کے دوران برآمدی کارگو میں 15فیصد کمی ہوئی اور یہ مالی سال 2022ء کے اسی عرصے کے دوران 63لاکھ 72ہزار ٹن کے مقابلے میں کم ہو کر 53لاکھ 90ہزار ٹن پر آ گیا۔ کراچی پورٹ پر کارگو اور کنٹینرز کی سرگرمیوں میں بھی 20فیصد کی کمی دیکھی گئی اور یہ جولائی تا مارچ مالی سال 2023ء کے دوران 31ارب 79کروڑ دس لاکھ ٹن ریکارڈ ہوئی جو گزشتہ مالی سال کے اسی عرصہ کے دوران 3کروڑ 57لاکھ دس ہزار ٹن ریکارڈ ہوا تھا۔