ٹرمپ کی گرفتاری، پاکستانی سیاستدانوں، عدلیہ اور اداروں کیلئے اہم پیغام

14 جون ، 2023

نیو یارک(تجزیہ، عظیم ایم میاں)سابق امریکا صدر اور 2024ء کے صدارتی انتخابات کے ری پبلکن امیدواروں میں بھی فی الحال صدارت کیلئے سب سے آگے انتخابی امیدوار ڈونلڈٹرمپ کی عدالت میں پیشی کے وقت گرفتاری پاکستانی سیاستدانوں، عدلیہ، پاکستان کے مفادات کے نگرانوں، جانبدار سیاسی ورکروں، انسانی حقوق اور جمہوریت کے حامیوں اور قانون کی بالا دستی کے حامیوں سمیت سب کے لئے اہم پیغام لئے ہوئے ہے۔ امریکا، برطانیہ اور یورپ کی مثالیں دینے والے ٹرمپ کی پیشی کے انداز پر نظر ڈالیں، اس گرفتاری پر ٹرمپ کے حامیوں نے عدالت کے باہر احتجاج کرتے ہوئے ٹرمپ کی گرفتاری کی مذمت کی لیکن امریکی جمہوریت اور عدلیہ نے یہ بھی واضح کر دیا کہ امریکی نظام میں سابق امریکی صدر ہو یا آنے والے انتخابات میں کوئی مقبول اور فرنٹ لائن صدارتی امیدوار ہو یا مہنگے اور قابل ترین وکلاء کی خدمات کا حامل اور دولت مند شہری ہو سب قانون کی بالا دستی کے یکساں طور پر تابع ہیں۔ نہ کوئی عدالت پیشی پر خیر مقدم کرتے ہیں نہ ہی گرفتار ہونے پر مراعات اور ریسٹ ہاؤس اور دوستوں سے خوش گپیوں کی اجازت اور موقع فراہم کرتی ہے نہ ہی کسی جانبداری کا کھلا مظاہرہ کر کے عوام میں انگشت نمائی کے مواقع دیئے جاتے ہیں۔ ٹرمپ کے خلاف سماعت کسی اعلیٰ عدالت میں نہیں بلکہ جوناتھن گڈمین نامی ایک مجسٹریٹ کی عدالت میں ہوئی۔ ڈونلڈ ٹرمپ کو سرکاری حساس دستاویزات کو چھپانے اور وہائٹ ہاؤس سے لے جانے کے الزامات کے تحت گرفتار کیا گیا تھا جس میں پینٹا گون اور فوجی امور سے متعلق دستاویزات بھی شامل تھیں جب کہ پاکستان میں اقتدار سے محروم ہونے والے حکمران کھلے عام اپنے اقتدار کے ایام میں فوج کے کمانڈر انچیف سے اپنی ملاقاتوں، گفتگو اور دیگر حساس امور کو اقتدار سے محروم ہونے پر خود اپنے سیاسی اور اقتدار مفادات کے لئےسر عام چرچا کرتے ہیں۔ ٹرمپ کے حامی 6 جنوری کے حملے کو عوام کے غصہ اور احتجاج کا نام دے سکتے تھے لیکن اس حملے کو جمہوریت کے خلاف حملہ اور فاشسٹ طریقہ کار قرار دے کر تشدد اور توڑ پھوڑ کرنے والوں کو سزائیں سنا دی گئیں۔ جبکہ پاکستان میں فوجی تنصیبات پر حملے کا منصوبہ، حمایت اور عملی لوٹ مار کرنے والوں کی گرفتاریوں کو ملکی مفاد کی بجائے سیاسی جانبداریوں کی عینک سے دیکھ کر انسانی حقوق اور جمہوریت کی خلاف ورزی کا واویلا جاری ہے۔ وہ سیاستداں جو بات بات پر امریکا، برطانیہ اور یورپی جمہوریت اور انسانی حقوق کا حوالہ دیتے ہیں وہ ٹرمپ کی عدالت میں پیشی کے انداز پر نظر ڈال لیں۔