سمندری طوفان سے نمٹنے کیلئےمکمل تعاون کرینگے،محسن نقوی کا وزیراعلیٰ سندھ کو فون

14 جون ، 2023

لاہور(نمائندہ خصوصی،خصوصی رپورٹر)نگران وزیراعلیٰ پنجاب محسن نقوی نے گزشتہ روز وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کو فون کیا اور سمندری طوفان ”بائپر جوائے“ سے نمٹنے کیلئے پنجاب حکومت کی جانب سے مکمل تعاون کی یقین دہانی کرائی۔انہوں نے کہا کہ پنجاب کے امدادی سرگرمیوں سے متعلقہ اداروں کو سندھ حکومت کی مدد کیلئے الرٹ کر دیا ہے۔وزیراعلیٰ سندھ نے شکریہ ادا کیا۔نگران وزیر اعلی پنجاب نے ملتان کے نشتر ہسپتال ٹو، سرائے نشتر ہسپتال، کارڈیالوجی انسٹی ٹیوٹ و توسیعی ایمرجنسی بلاک اور کاٹن ریسرچ انسٹی ٹیوٹ کے دورے کئے -انہوںنے سرائے نشترہسپتال کا افتتاح کیا اور سرکٹ ہاؤس میں تاجروں اور وکلاء کے وفود سے ملاقات کی- میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے نگران وزیراعلیٰ نے کہا کہ نشتر ٹو ہسپتال کو ستمبر تک سو فیصد سٹاف کے ساتھ فنکشنل کر دیا جائے گا۔ نشتر ٹو کا سنگ بنیاد وزیراعظم شہباز شریف نے رکھا تھا، افتتاح پر انہیں ساتھ لائیں گے۔ ملتان میں اگلے ماہ تک کارڈیالوجی انسٹی ٹیوٹ کا توسیعی منصوبہ بھی مکمل فنکشنل ہوگا۔چلڈرن ہسپتال کی نئی ایمرجنسی جلد بنائی جائے گی۔ ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹر ہسپتال کی نئی عمارت بھی اگست کے آخر تک فعال ہو جائے گی۔ ملتان کے جاری ترقیاتی منصوبوں کو بجٹ دے کر مکمل کریں گے۔ ملتان میں کاٹن ریسرچ انسٹی ٹیوٹ کے دورہ کے موقع پروزیراعلیٰ نے کپاس کو سنڈیوں کے حملے سے بچانے کیلئے پیشگی حفاظتی اقدامات کرنے کا حکم دیا اور کہا کہ ضروری مشینری کیلئے ایک ارب روپے کے اجراء کی منظوری دے دی ہے۔ تاجروں اور وکلاء کے وفودنے ملاقات میں وزیر اعلی نے کہا کہ مارکیٹوں کی بندش کے بارے میں تاجر برادری سے مشاورت کی جائے گی-انہوں نے ملتان ڈسٹرکٹ بار ایسوسی ایشن کے لئے ایک کروڑ روپے،وہاڑی اور لودھراں ڈسٹرکٹ بار ایسوسی ایشنز کے لئے 50،50 لاکھ روپے کی گرانٹ کے چیک دیئے-صوبائی وزراء عامر میر، اظفر علی ناصر، ایڈیشنل چیف سیکرٹری ساؤتھ پنجاب، کمشنر، ڈپٹی کمشنر،آرپی اواور متعلقہ حکام بھی اس موقع پر موجود تھے-مزید برآں نگران وزیراعلیٰ نے گزشتہ رات گئے اکبرچوک فلائی اوور پراجیکٹ کا دورہ کیا اورکام کی رفتار کا جائزہ لیا، زیر تعمیر پراجیکٹ کی تعمیراتی سرگرمیوں کا مشاہدہ کیا۔ انہوں نے منصوبے پر کام کی رفتار مزید تیز کرنے کا حکم دیتے ہوئے کہا کہ پراجیکٹ کی تکمیل سے ماڈل ٹاؤن، فیصل ٹاؤن،جوہرٹاؤن، ٹاؤن شپ، پیکو روڈ، کینال روڈ، کوٹ لکھپت اور قائداعظم انڈسٹریل اسٹیٹ کے رہائشی مستفید ہوں گے-روزانہ 2 لاکھ 50 ہزار گاڑیوں کو آمد و رفت کی بہترین سہولت ملے گی-پراجیکٹ کی تعمیر کے دوران ایک درخت بھی نہیں کاٹا جائے گا۔عوام کی سہولت کیلئے اکبر چوک فلائی اوور پراجیکٹ کو کم از کم وقت میں مکمل کیا جائے گا۔ انہوں نے پراجیکٹ کی تعمیر کے دوران ٹریفک کی روانی کے لئے بہترین انتظامات کی ہدایت کی۔صوبائی وزیر اطلاعات عامر میر،کمشنر لاہور ڈویژن و ڈی جی ایل ڈی اے محمد علی رندھاوااور متعلقہ حکام بھی اس موقع پر موجود تھے۔