نگراں وزیراعظم نے اقوام متحدہ میں پاکستان کا جامع موقف پیش کیا

25 ستمبر ، 2023

اسلام آباد (اے پی پی) نگراں وزیراعظم انوار الحق کاکڑ نے حال ہی میں اختتام پذیر ہونے والے اپنے نیویارک کے پانچ روزہ دورہ کے دوران عالمی برادری کے سامنے اہم علاقائی اور عالمی امور پر پاکستان کا موقف بھر پوراور جامع انداز میں پیش کیا۔ وزیر اعظم نے اقوام متحدہ کے 78ویں اجلاس سے خطاب کیا اور اس موقع پر عالمی رہنماؤں کے ساتھ ملاقاتیں بھی کیں۔ وزیر اعظم کے دورہ کے حوالہ سے میڈیا کے ایک حصےمیں دیئے گئے تاثرات کے برعکس وزیر اعظم کا دورہ اور ان کی مصروفیات عالمی رہنماؤں اور حکومتی نمائندوں کے لئے بھرپور دلچسپی اور توجہ کا حامل تھا ۔ وزیرا عظم کی طرف سے پیش کردہ نقطہ نظر عالمی رہنمائوں کے نقطہ نظر سے ہم آہنگ تھا جسے بین الاقوامی میڈیا نے بڑے پیمانے پر اجاگر کیا ہے۔وزیر اعظم انوار الحق کاکڑ نے نیویارک میں عالمی رہنماؤں کو ʼبھارت کے بدمعاش رویےʼ کے بارے میں آگاہ کیا ، جس نے آر ایس ایس سے متاثر بی جے پی کے حکمران انتہا پسندوں کے خطرناک ارادوں کے بارے میں پاکستان کے مستقل موقف کی توثیق کی ہے، بھارت کا مذہبی جنونی طبقہ نہ صرف ہندوستان میں اقلیتوں پر ظلم و ستم کرنے پر تلا ہوا ہے بلکہ ہندو بالادستی کا بڑھتا ہوا رجحان علاقائی اور عالمی امن کے لیے بھی خطرہ ہے۔وزیر اعظم کے خیالات کو ان کے متنوع سامعین نے تسلیم کیا کیونکہ ناقابل تردید شواہد سامنے آنے کے بعد مغربی ممالک نے سکھ رہنما اور کینیڈین شہری ہردیپ سنگھ نجار کے بھارتی ریاستی سرپرستی میں قتل پر اپنے تحفظات کا اظہار کیا۔وزیر اعظم نے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے اجلاس سے اپنے خطاب میں کشمیر، اسلامو فوبیا، مالی عدم مساوات، کوویڈ کے باعث مہنگائی، موسمیاتی تبدیلی، افغانستان میں امن، اقوام متحدہ کے کردار اور اصلاحات اور دہشت گردی کے مسائل کا بھی ذکر کیا۔