داعش اور TTPکے پیچھے جائینگے،نگراں وفاقی وزیر داخلہ

01 اکتوبر ، 2023

کوئٹہ ( اسٹا ف رپورٹر)نگراں وفاقی وزیر داخلہ میر سرفراز بگٹی نے کہا ہے کہ داعش اور TTPکے پیچھے جائینگے،ملک میں دہشت گردوں اور سہولت کاروں کیخلاف جتنا بڑا آپریشن کرنا پڑا اب کرینگے،دہشتگردی میں ’را‘ ملوث ہے ، خون کا بدلہ لینگے، معصوم شہریوں کا قتل کرنے والے لوگ فسادی ہیں ، خون کے ایک ایک قطرے کا حساب لیا جائیگا،حکومتی رٹ کو قائم رکھنے کیلئے کسی بھی قربانی سے دریغ نہیں کیا جائے گا، پاکستان میں دہشتگردوں ان کے سہولت کاروں کیلئے کوئی جگہ نہیں فیصلہ کیا ہے کہ دہشتگردی کے خلاف زیرو ٹالرینس کی پالیسی اپنائی جائیگی۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے ہفتہ کو وزیراعلیٰ سیکرٹریٹ کوئٹہ میں پریس کانفرنس میں کیا ۔اس موقع پر نگران صوبائی وزیر داخلہ کیپٹن (ر) میر زبیر احمد جمالی اور نگران وزیر اطلاعات جان اچکزئی، اور صوبائی مشیر برائے وومن ڈویلپمنٹ و سوشل ویلفیئر شانیہ خان بھی موجود تھیں ۔انہوں نے کہا کہ سانحہ مستونگ کی جتنی مذمت کی جائے کم ہو گی، مستونگ میں خوارج نے سرور کائنات کی ولادت کا جشن منانے والوں کو نشانہ بنا یا ہے حالانکہ یہ کائنات انہی کے لئے بنائی گئی تھی، سانحہ مستونگ کے حوالے سے اعلیٰ سطحی اجلاس ہوا ہے جس میں زخمیوں کے علاج معالجے کی ذمہ داری پاک فوج نے اٹھا ئی ہے۔ ہم نے فیصلہ کیا کہ ملک میں دہشت گردوں کیلئے کوئی جگہ نہیں، ان کے خلاف بھرپور کارروائی کریں گے ا، تمام ادارے اور حکومت مل کر کام کرے گی، داعش ہو، ٹی ٹی پی ہوتمام دہشتگرد ایک ہیں ایک ہے جن کوبھارتی ایجنسی راء ہینڈل کر رہا ہے، دہشت گردوں کا تعاقب کریں گے۔اس سے قبل حافظ حمد اللہ پر حملے کا ماسٹر مائنڈمار دیا گیا ہے۔ آخری دہشتگرد کے خاتمے تک کارروائی ہوگی اس بار کوئی پالیسی تبدیل نہیں ہوگی۔ بلکہ دہشت گردوں کا خاتمہ ممکن بنایا جائے گا۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ پہلے بھی پالیسی بنتی رہی لیکن بعد میں اس کو تبدیل کردیا گیا لیکن اب ایسا نہیں ہوگا دہشت گردوں کے خلاف آپریشن اور زیرو ٹالرنس کیلئے انٹیلی جنس بیسڈ آپریشن کئے جائیں گے تاکہ اس کے خاتمے کو ممکن بنایا جاسکے۔