مستونگ میں بے گناہ انسانوں کو نشانہ بنانے والوں کا اسلام سے کوئی تعلق نہیں ، گورنر وزیر اعلی

01 اکتوبر ، 2023

کوئٹہ/اندرون بلوچستان(اسٹاف رپورٹر/نامہ نگاران)گورنر بلوچستان‘ وزیراعلیٰ ‘صوبائی وزراء سیاسی جماعتوں کے سربراہ عوامی سماجی نمائندوںنے سانحہ مستونگ کی مذمت کرتے ہوئے کہاہے کہ بے گناہ انسانوں کو نشانہ بنانے والے کسی رعایت کے مستحق نہیں دہشت گرد اوران کے سرپرست انسانیت سے عاری ہیں مسلمانوں کا بہیمانہ قتل قرآن کی تعلیمات کے منافی ہے حملہ آوروں کا اسلام سے کوئی تعلق نہیں ہمیں اپنی صفوں میں دہشت گردی کے خلاف مکمل اتحاد پیدا کرنا ہوگااسلام امن اور رواداری کا مذہب ہے تفصیلات کے مطابق گورنر بلوچستان ملک عبدالولی خان کاکڑ نے مستونگ میں جشن عید میلادالنبیﷺ کے جلوس میں دھماکے کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہےکہ نہتے شہریوں کی زندگی سے کھیلنے والے سفاک دہشتگرد عناصر کسی بھی رعایت کے مستحق نہیں انہوں نے قانون نافذ کرنے والے اداروں پر زور دیا کہ جلد از جلد ملوث عناصر کو گرفتار کر کے قانون کے کٹہرے میں لایا جائےگورنر نے زخمیوں کو علاج و معالجے کی تمام طبی سہولیات فراہم کرنے کی ہدایت کی ڈاکٹرز اور عملے پر زور دیا کہ وہ زخمیوں کی جان بچائے کیلئے ٹھوس کاوشیں کریںگورنر نے شہداء کی مغفرت اور زخمیوں کی جلد صحت یابی کیلئے دعا کی۔نگران وزیراعلیٰ میر علی مردان خان ڈومکی نے مستونگ میں عید میلاد النبی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے جلوس میں ہونے والے بم دھماکے کی مذمت کرتے ہوئے واقعہ کی رپورٹ طلب کی اور تحقیقات کا حکم دے دیا انہوں نے کہا کہ تخریب کار عناصر کسی رعایت کے مستحق نہیں پر امن جلوس کو نشانہ بنانے والوں سے آہنی ہاتھ سے نمٹا جائے گا ہمیں اپنی صفوں میں دہشت گردی کے خلاف مکمل اتحاد پیدا کرنا ہوگااسلام امن اور رواداری کا مذہب ہے اور ایسی سفاک کاروائیاں کرنے والے خود کو مسلمان نہیں کہہ سکتے نگران وزیراعلیٰ نےشہداء کے لواحقین سے ہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے شہداء کی بلند درجات اور سوگوار خاندانوں کے لئے صبر جمیل کی دعا کی ہے۔ سابق وفاقی وزیر میر دوستین خان ڈومکی نے مستونگ ، ژوب اور ہنگو میں دہشت گردی کے واقعات کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ مسلمانوں کا بہیمانہ قتل قرآن کی تعلیمات کے منافی ہے حملہ آوروں کا اسلام سے کوئی تعلق نہیں ۔صوبائی وزیر صنعت و تجارت،ایکسائز و ٹیکسیشن اور توانائی پرنس احمد علی احمدزئی نے کہا کہ بے گناہ اور معصوم انسانوں کو بلا وجہ نشانہ بنانے کی اجازت کوئی بھی مذہب نہیں دیتا۔صوبائی وزیر کھیل نوابزادہ جمال رئیسانی نے کہاکہ قانون نافذ کرنے والے سیکورٹی اہلکار بہادری سے دہشتگرد عناصر اور انکے سہولت کاروں سے اہنی ہاتھوں سے نمٹے گے۔ صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر امیر محمد خان جوگیزئی نےکہا کہ دہشت گردکبھی اپنے مذموم مقاصد میں کامیاب نہیں ہونگے یہ بات انہوں نے بی ایم سی ہسپتال کوئٹہ کا دورہ پر مستونگ دھماکہ میں زخمی ہونے والوں کی عیادت کے دوران کہی انہوں نے ہسپتال انتظامیہ اور ڈاکٹرز زخمیوںکو تمام سہولیات فراہم کرنے ہدایت کی ۔ صوبائی وزیر قانون و پارلیمانی ایند پراسکیوشن امان اللہ کنرانی نےکہاکہ بے گناہ افرادکی شہادت اورزخمی ہونے کا واقعہ ناقابل برداشت ہےبی اے پی کی سینیٹرثناء جمالی‘مشیر برائے سوشل ویلفیئر اینڈ وومین ڈیویلپمنٹ شانیہ خان نے کہا کہ دہشت گردی کے خلاف پوری قوم متحد ہے ۔بلوچستان نیشنل پارٹی کے مرکزی اعلامیہ کے مطابق پارٹی قائد سردار اختر جان مینگل نے مستونگ خود کش حملے میں درجنوں قیمتی جانوں کے ضیاع کو دردناک قرار دیتے ہوئے کہا کہ حکومت زخمیوں کے علاج و معالجے کے لئے فی الفور اقدامات کرتے ہوئے واقعے میں ملوث ملزمان کی گرفتاری کو یقینی بنایا جائے پارٹی بیان میں رہنماؤں و کارکنوں کو بھی ہدایت کی گئی ہے کہ مستونگ اور کوئٹہ کے ہسپتالوں میں جا کر زخمیوں کیلئے خون کے عطیات اور ہر ممکن تعاون کو یقینی بنائیں۔ پیپلز پارٹی کے رہنماء چیف آف جھالاوان نواب ثناء اللہ خان زہری نے کہاکہ معصوم لوگوں کو شہید کرنے والے کسی رعایت کے مستحق نہیں ہے۔سینئر سیاستدان سردار یار محمد رند نے سانحہ مستونگ پر افسوس کااظہار کرتے ہوئے کہاکہ بے گناہ انسانوں کونشانہ بنانے والے انسانیت کے نام پر دھبہ ہیں۔ سابق وزیراعلیٰ جام کمال خان عالیانی نے مستونگ سانحے میں ڈی ایس پی سمیت بے گناہ لوگوں کی شہادت پر افسوس کااظہار کرتے ہوئے لواحقین سے ہمدردی کااظہارکیا۔ جمعیت کے صوبائی امیر مولانا عبدالوسع نے مستونگ اور ہنگو میں دھماکوں کی مذمت کرتےہوئے کہا کہ ملک دشمن عناصر کو پاکستان کا امن برداشت نہیں ہو رہا ہے ۔نیشنل پارٹی کے مرکزی سینئر نائب صدر سابق رکن قومی اسمبلی سردار کمال خان بنگلزئی ‘صوبائی صدر رحمت صالح بلوچ‘ جنرل سیکرٹری خیربخش بلوچ‘ ضلع کوئٹہ کے صدر حاجی عطاء محمد بنگلزئی‘ عثمان علی جمالی‘ پیپلز پارٹی کے سابق وزیر داخلہ میر سلیم احمد خان کھوسہ ‘سابق صوبائی وزیر بورڈ آف ریونیو میر سکندر خان عمرانی اے این پی کے انجینئر زمرک خان اچکزئی‘مسلم لیگ(ن) کے صوبائی صدر شیخ جعفر خان مندوخیل ‘جے ڈبلیو پی بلوچستان کے آرگنائزر میر شمس کرد‘مسلم لیگ ق کے مرکز ی رہنمائو ں عبدالرزاق لغاری ملک شیراحمدشاہوانی‘ جمہوری وطن پارٹی کے مرکزی ترجمان نوراللہ وطن دوست ‘پیپلز پارٹی کے سردارزادہ فیصل خان جمالی ‘ سید حسنین ہاشمی ‘چیئرمین میونسپل کمیٹی ڈھاڈر سید فرید احمد شاہ دو پاسی چیئرمین میونسپل کمیٹی سبی سردار محمد خان خجک ،جمعیت سبی کے امیر مولانا محمد ادریس ،سر پرست اعلیٰ مولانا عطاء اللہ بنگلزئی ،میر صلاح الدین ڈومکی ‘ تحریک اتحاد بین السادات پاکستان چیئرمین سید الطاف حسین شاہ چشتی‘صوبائی نائب صدر سید سیف الرحمن شاہ‘صوبائی جنرل سیکرٹری سید محمد حسن شاہ چشتی ڈپٹی جنرل سیکرٹری سید عزیر شاہ چشتی ضلعی صدر سید امین شاہ غرشین سید باسط شاہ صداقت شاہ عزیز شاہ منور شاہ فرخ شاہ زوہیب شاہ اشرف شاہ سید قاہر شاہ سید ہمت علی شاہ سید مقصود شاہ دوپاسی سید قاسم۔شاہ سید ولایت شاہ چشتی سید دولت شاہ تحریک اتحاد بین السادات پاکستان کے ضلعی صدر سید آمین شاہ غرشین ‘ مرکزی جمعیت اہل حدیث بلوچستان کے امیر مولانا ڈاکٹر علی محمد ابوتراب، ناظم اعلیٰ مرکزی جمعیت اہل حدیث بلوچستان مولانا عبدالغنی ضامرانی، نائب امیر مولانا عبدالرزاق خارانی، مولانا عصمت اللہ سالم، مفتی سمیع اللہ مولانا زکریا ذاکر ‘بلوچستان شیعہ کانفرنس کے صدر حاجی محمد جواد رفیعی‘پی پی کے ڈپٹی جوائنٹ سیکرٹری خواتین ونگ سکینہ عبداللہ‘جمعیت علماء اسلام ( س) کے مرکزی ڈپٹی سیکر ٹری جنرل مولانا محمد شفیق دولت زئی سابق ترجمان وزیراعلیٰ بلوچستان بابر یوسفزئی‘بی اے پی کےسیکرٹری اطلاعات و ترجمان چوہدری شبیرسابق نگران صوبائی وزیر داخلہ آغا عمرجان بنگلزئی نے الگ الگ بیانات میں کہاکہ پاکستان اور بلوچستان کے دشمن کے عزائم خاک میں ملانے کا وقت ہے ہم دشمن کے سامنے کبھی نہیں جھکیں گے ملک میں جمہوری و سیاسی عمل کو روکنے اور مذہبی انتہاء پسندی کی حوصلہ افزائی کے نتائج آج عوام بھگت رہی ہے۔ بلوچستان کے حالات جان بوجھ کر خراب کیے جا رہے، وقت و حالات کا تقاضا ہے کے بلوچستان کے تمام سیاسی، مذہبی جماعتوں، وکلا تنظیمیں اور سول سوسائٹی بلوچستان کے تمام مسائل پے مل بیٹھ کر کوئی لائحہ عمل ترتیب دے اس سے پہلے کے حالات مزید خرابی کی طرف جاہے اور بلوچستان ہمارے ہاتھ سے نکل جائے۔ جمعیت بلوچستان کے صوبائی پریس ریلیزمیں کہاگیا کہ معصوم شہریوں پر حملے کسی صورت برداشت نہیں کی-جمعیت ضلع کوئٹہ کے امیر مولانا عبد الرحمن رفیق سینئر نائب امیر مولانا خورشید احمد جنرل سیکرٹری حاجی بشیر احمد کاکڑ سیکرٹری اطلاعات عبدالغنی شہزاد نےکہا کہ ملک میں دہشت گردی کی حالیہ لہر اسلام اور ملک کے خلاف گہری سازش ہے اس کے خلاف ملک وملت کا اتحاد و اتفاق ضروری ہے۔‘بی اے پی کے صوبائی جنرل سیکرٹری حاجی نورمحمد خان دمڑ نے کہاکہ دہشت گردوںکاکوئی مذہب نہیں تحریک نفاذ فقہ جعفریہ بلوچستان کے صوبائی بیان میں کہا گیا کہ مستونگ اور ہنگو سانحات کی جتنی مذمت کی جائے کم ہے۔بلوچستان بار کونسل کے بیان کہاگیا کہ صوبائی حکومت وفاقی حکومت سیکورٹی فورسز بلوچستان کے عوام کو تحفظ دینے میں ناکام ہوچکی ہیں سالانہ اربوں روپے امن و امان سیکورٹی کے نام پر خرچ ہوتے ہیں۔ صدرملی یکجہتی کونسل بلوچستان مولاناعبدالحق ہاشمی،جنرل سیکرٹری سیدمومن شاہ جیلانی،سینئرنائب صدرعلامہ سیدہاشم موسوی،نائب صدورڈاکٹرعطا الرحمن،مولاناانوارلحق حقانی،مولاناہدایت الرحمان بلوچ،علامہ اکبرحسین زاہدی، رانا محمد اشفاق، سیدعتیق الرحمان،مولانا عبدالکبیرشاکر،علامہ مقصودعلی ڈومکی، سیدمومن شاہ ،علامہ حبیب اللہ چشتی قادری ،نجیب الرحمان ساسولی نے12ربیع الاول کے مقدس دن میں مستونگ اور ہنگومیں مبارک عاشقان رسول ﷺ کے جلوس پر خودکش حملہ کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہاکہ انسانیت دشمنوں کے خلاف سب کو متحد ہونا ہوگا ۔ امیر جماعت اسلامی بلوچستان مولانا عبدالحق ہاشمی،جنرل سیکرٹری مولانا ہدایت الرحمان بلوچ ، نائب امراء مولانا عبدالکبیر شاکر،بشیراحمدماندائی ،زاہداختر بلوچ ،ڈاکٹرعطاء الرحمان ،حافظ محمد اسماعیل مینگل ،میر محمدعاصم سنجرانی نے کہا کہ مستونگ اورہنگو میں قیمتی جانوں پر دکھ ہوامستونگ دھماکے کی جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے ۔کوئٹہ بار ایسوسی ایشن کے صدر ملک عابد کاکڑ ایڈووکیٹ، جنرل سیکرٹری چنگیز حئی بلوچ ایڈووکیٹ، نائب صدر کوئٹہ محمد عباس کاکڑ ایڈووکیٹ ،نائب صدر سریاب جہانزیب مری ایڈووکیٹ، نائب صدر کچلاک سید نصیب اللہ آغا ایڈووکیٹ، جوائنٹ سیکریٹری ملک آحمد بلال کاکڑ ایڈووکیٹ، فنانس سیکرٹری عبداللہ شیرانی ایڈووکیٹ، اور لائبریری سیکرٹری اسداللہ اچکزئی ایڈووکیٹ نے کہا کہ سانحہ مستونگ اور پشاور کا رونما ہونا حکمرانوں کی ناکامی کا منہ بولتا ثبوت ہے۔ ریاست امن و امان قائم کرنے میں مکمل طور ناکام ہوچکی ہے ۔سنگت موسیٰ بلوچ نے کہاکہ 12 ربیع الاول کے دن عاشقان رسول کے جلوس پر خود کش دھماکہ بدترین دہشت گردی ہے۔ پیپلز پارٹی کے صوبائی صدرمیر چنگیز جمالی، جنرل سیکرٹری روزی خان کاکڑ، سیکرٹری اطلاعات سردار سربلند جوگیزئی، سابق صوبائی وزیر حاجی علی مدد جتک ،میر محمد صاد ق عمرانی نےکہا کہ مستونگ دھماکے میں بے گناہ افرادکی شہادت اورزخمی ہونے کا واقعہ ناقابل برداشت اور قابل مذمت ہے اس بزدلانہ دھماکے کی جتنی مذمت کی جائے وہ کم ہے۔بلوچستان نیشنل پارٹی عوامی کے سربراہ میر اسراراللہ خان زہری نے مستونگ واقعہ کو انسانیت سوز واقعہ قرار دیا ہے اورمطالبہ کیا ہے کہ زخمیوں کے علاج کے لئے فی الفور عملی اقدامات کئے جائیں ۔ہزارہ ڈیموکریٹک پارٹی کے مرکزی بیان میں مستونگ سانحہ کے نتیجے میں 50 سے زائد افراد کے شہادت اور 65 کے قریب بیگناہ افراد کے زخمی ہونے کے واقعہ پر دلی رنج اور افسوس کا اظہار کرتےہوئے کہاگیا کہ انتہا اور شدت پسندی نے صوبے کو کئی دہائیاں پیچھے دھکیل کر رکھ دیا ہے ۔ بی این پی عوامی کے مرکزی صدر میر اسد اللہ بلوچ نے سانحہ مستونگ پر افسوس کااظہار کرتےہوئے کہاکہ واقعہ پر ہر آنکھ آشکبار ہے۔ پشتونخوا ملی عوامی پارٹی کے مرکزی بیان میںمستونگ اور ہنگو کے دھماکوں کی مذمت کرتے ہوئے ملک اورخطے میں ہر قسم کی دہشتگردی ، انتہا پسندی کو معاشرے کیلئے ناسورقرار دیا ہے اور مطالبہ کیا گیا ہے کہ دہشتگردی کے واقعات میں ملوث عناصر کو قانون کے کٹہرے میں لاکرعوام کے سرومال کی تحفظ کو یقینی بنایا جائے ۔پشتونخوا ایس او کے زونل آرگنائزر لطیف کاکڑ اور آرگنائزنگ باڈی کےارکان ‘ مسلم لیگ (ن) بلوچستان کے جنرل سیکرٹری جمال شاہ کاکڑ نے کہا کہ حکومت اور انتظامیہ سانحہ مستونگ میں ملوث کوقانون کے کٹہرے میں لانے کے لئے تمام وسائل بروئے کار لائے۔چیف آف ساراوان نواب اسلم خان رئیسانی سابق صوبائی وزیر نواب محمد خان شاہوانی‘پیپلز پارٹی کے سردار نوراحمد بنگلزئی سردار عظیم جان محمدشہی سردار زادہ میر جاوید لہڑی سراد احمد نواز علی زئی نے کہاکہ سانحہ مستونگ کی جتنی مذمت کی جائے کم ہے واقعے میں ملوث کسی رعایت کے مستحق نہیں دریں اثناء ڈسٹرکٹ کونسل کے چیئرمین سردار زادہ میر محمد قاسم سرپرہ چیئرمین میونسپل کمیٹی مستونگ سردار شاہ زمان علیزئی نیشنل پارٹی کے مرکزی سیکرٹری اطلاعات اسلم بلوچ ودیگر رہنمائوں نے دھماکے کے بعد ہسپتال پہنچ کر زخمیوں کی عیادت کی ۔