سائفر مقدمہ باجوہ کو بچانے کیلئے گھڑا گیا، غداری تو میرے ساتھ ہوئی ،چیئرمین PTI

13 اکتوبر ، 2023

اسلام آباد (نمائندہ جنگ) چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان نے کہا ہے کہ سائفر مقدمہ باجوہ کو بچانے کیلئے گھڑا گیا، غداری تو میرے ساتھ ہوئی ،جیل کے حالات سے ایڈجسٹ،قرآن پاک کا مطالعہ جاری ،ایمان مضبوط ہوا،سیاسی زندگی کاجائزہ لینےکاموقع ملا،شروع میں جیل میں مشکلات دیکھیں، اب ایڈجسٹ ہو گیا ہوں ، اب جس مرضی قید میں رکھا جائے اور جو بھی شرائط عائد کی جائیں حقیقی آزادی ، قانون کی حکمرانی اور پاکستان کے آئین کی بالادستی کی جدوجہد ، آزاد اور خود مختار انتخابات کے مطالبے سے ایک انچ بھی پیچھے نہیں ہٹوں گا۔ چیئرمین پی ٹی آئی نے جیل کے اندر سے اپنی فیملی کے ذریعے قوم کے نام پیغام میں کہا کہ جب وہ اٹک جیل میں غیر قانونی طور پر قید تھے تو پہلے چند دن خاصے مشکل تھے۔ ان کو بستر فراہم نہیں کیا گیا اور فرش پر سونا پڑا تھا ، جہاں کیڑے مکوڑے اور مچھر تھے۔ لیکن وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ وہ جیل کے حالات کو اچھی طرح سے سمجھ چکے ہیں اور ایڈجسٹ ہو گئے ہیں۔ گزشتہ روز سماجی رابطے کی ویب سائٹ ایکس پرعمران خان کی فیملی کی جانب سے ایک پیغام شیئر کیا گیا ہے جس میں لکھا گیا کہ چیئرمین پی ٹی آئی کہتے ہیں کہ جیل جانے سے پہلے اور جیل جانے کے بعد کے عمران خان میں بہت فرق آ چکا ہے۔ جیل میں رہنے کے دوران ان کو دوسری کتابوں کے ساتھ قرآن پاک کا گہرائی سے مطالعہ اور تحقیق کرنے کا موقع ملا ہے جس سے ان کا ایمان مضبوط ہوا ہے اور ان کو اپنی سیاسی زندگی کے آخری چند سالوں کا خود بھی جائزہ لینے کا موقع ملا ہے۔ انہوں نے کہا سائفر کیس سابق آرمی چیف جنرل باجوہ اور ڈونلڈ لو کو تحفظ فراہم کرنے کیلئے بنایا گیا ہے۔، غداری تو میرے ساتھ ہوئی۔ حکومت کی تبدیلی کیلئے غیر ملکی سازش کی تحقیقات کرنے کے بجائے اس غداری کے بارے میں پاکستانی عوام ، اس ملک کے حقیقی محافظوں کو آگاہ کرنے پر الٹا ان کے ہی خلاف مقدمہ درج کیا گیا۔ انہوں نے پیش گوئی کرتے ہوئے کہا کہ جس دن بھی الیکشن ہوں گے پاکستان کے عوام بڑی تعداد میں پاکستان تحریک انصاف کو ووٹ دینے نکلیں گے ۔ یہ لوگ کتنا ہی دھوکہ دیں، ان کا مقدر صرف شکست ہے۔