سیاسی بحران، کیا پاکستان دوبارہ ڈیفالٹ کے دہانے پر آجائیگا؟

12 فروری ، 2024

اسلام آباد (مہتاب حیدر) سیاسی بحران، کیا پاکستان دوبارہ ڈیفالٹ کے دہانے پر آ جائیگا؟ پاکستانی حکام کو نئی حکومت کے قیام کے بعد آئی ایم ایف مشن کے دورے کی توقع ہے۔ آئی ایم ایف کے جائزہ مشن کا دورہ 8 فروری کے انتخابات کے نتیجے میں وفاقی اور صوبائی سطح پر نئی منتخب حکومت کی تشکیل سے مشروط ہے اور وہ رواں ماہ کے آخر تک اسلام آباد کا دورہ کر سکتا ہے۔ آئی ایم ایف کا آئندہ مشن 3 ارب ڈالرز کے اسٹینڈ بائی ارینجمنٹ (ایس بی اے) کی تکمیل کے لیے کافی اہم سمجھا جاتا ہے جو 12 اپریل 2024 کو ختم ہونے والا ہے، اور پھر متوقع درمیانی مدت کے بیل آؤٹ پیکج کی نمایاں خصوصیات کو حتمی شکل دینا تاکہ بیرونی قرضوں کی واپسی پر ڈیفالٹ کو روکا جا سکے۔ آئی ایم ایف نے اپنی حالیہ اسٹاف رپورٹ میں کہا ہے کہ پروگرام کے ڈھانچہ جاتی ایجنڈے کو مکمل کرنے کے لیے کافی وقت فراہم کرنے کے لیے 15 مارچ 2024 تک دوسرے جائزے کے لیے رسائی کو دوبارہ جاری رکھا جائے گا۔ تاہم انتخابات کے نتائج پر دیرپا تنازع کو متحرک کرنے کے تناظر میں ایس بی اے کےتحت 1.2 ارب ڈالرز مالیت کے دوسرے جائزے کی تکمیل اور آخری قسط کے اجراء میں آئی ایم ایف مشن کی ممکنہ تاخیر کے نتیجے میں آئی ایم ایف کی مکمل حمایت کے بغیر اگلے چند ماہ گزرنے کے بعد اسلام آباد کے اقتصادی افق پر ڈیفالٹ کا خدشہ پیدا ہو سکتا ہے۔