پاکستان ٹوبیکو کمپنی کی 28ارب96کروڑ منافع کیساتھ 35.8فیصد گروتھ

28 اپریل ، 2024

اسلام آباد( کامرس رپورٹر ) پاکستان میں تمباکو کے شعبے میں کام کرنیوالی سب سے بڑی کمپنی پاکستان ٹوبیکو کمپنی گزشتہ دس برسوں میں منافع کے لحاظ سے ترقی کی جانب گامز ن ہے جو کہ پاکستان کی معیشت کیلئے ایک مثبت علامت ہے، ایف بی آر کی غیر قانونی سگریٹ کیخلاف کارروائی سے قانونی سگریٹ تیار کرنیوالی کمپینوں کی ٹیکس ریونیو بڑھنے کا امکان ہے، دستاویزات کے مطابق پاکستان ٹوبیکو کمپنی کی گزشتہ دو برسوں میں گروتھ 35.8فیصد رہی ہے، گزشتہ سال 2023میں کمپنی کو28 ارب96کروڑ روپے منافع حاصل ہوا اور سال 2022کے مقابلے میں 35.8فیصد گروتھ رہی اور منافع 21ارب32 کروڑ روپے تھا ، سال 2021 میں کمپنی کا منافع 18ارب 86کروڑ روپے رہا اور 14.4فیصد گروتھ ہوئی ، 2020میں 28فیصد گروتھ کے ساتھ منافع16ارب49کروڑ روپے ، 2019میں 24.7فیصد شرح گروتھ کے ساتھ کمپنی کا منافع 12ارب88کروڑ روپے ، 2018میں 8فیصد گروتھ کے ساتھ منافع 10ارب 33کروڑ روپے رہا ، سال 2017میں کمپنی کا شرح منافع منفی میں رہا اور9ارب57کروڑ روپے کا منافع ہو ا،سال 2016میں کمپنی کے منافع کا گراف 47فیصد گروتھ پر رہا اور 10ارب36کروڑ روپے کا منافع حاصل ہوا، پاکستان ٹوبیکو کمپنی ملک میں سب سے زیادہ ٹیکس ریونیو جمع کرانے والی کمپنی ہے ، دستاویزات کے مطابق کمپنی نے سیلز ٹیکس اور ایف ای ڈی کی مد میں 2023میں 205ارب91کروڑ روپے جمع کرائے ، سال 2022میں 137ارب 73کروڑ روپے ، سال2021میں124ارب 48کروڑ روپے ،2020میں105ارب 36کروڑروپےاور 2019میں97ارب 5کروڑ ، 2018میں 84ارب روپے کا ٹیکس جمع کرایا گیا، ملک میں غیر قانونی اور جعلی سگریٹ کے خلاف ایف بی آر کی جانب سے کارروائی میں اضافہ ہوا اس سے قانونی سگریٹ تیار کرنیوالی کمپینوں کی جانب سے ٹیکس ریونیو مزید بڑھنے کا امکان ہے۔