اراکین پارلیمنٹ اور اہم اسٹیک ہولڈرز کی تمباکو مصنوعات پر ٹیکس میں اضافے کی تجویز

03 مئی ، 2024

اسلام آباد(آئی این پی)اراکین پارلیمنٹ اور دیگر اہم اسٹیک ہولڈرز نے سگریٹ نوشی کاشکار بچوں کی مائوں کو بااختیار بنانے اور تمباکو کی مصنوعات پر ٹیکس میں اضافے کی تجویزدی ہے۔گزشتہ روز کمپئین فار ٹوبیکو فری کڈز ٹی اور عورت فاونڈیشن کے تعاون سے منعقدہ ایک تقر یب میں خواتین ممبر پارلیمنٹ اور پالیسی سازوں نے شرکت کی جس کا مقصد پاکستان بھر میں خاندانوں اور کمیونٹیز پر تمباکو کے مضر اثرات کے خلاف کارروائی کی فوری ضرورت پر بات کرنا تھا۔شائستہ پرویز ملک، ہما چغتائی، سحر کامران، ڈاکٹر مہرین رزاق بھٹو، ڈاکٹر شائستہ خان، شاہدہ اختر علی اور نعیمہ کشور خان نے پاکستان میں تمباکو نوشی کے اہم مسئلے کا مقابلہ کرنے کے لیے ایک جامع نقطہ نظر کی فوری ضرورت پر روشنی ڈالی ۔ اراکین پارلیمنٹ نے صحت عامہ میں خواتین کی قیادت کی اہمیت اورتمام شہریوں کی صحت کے تحفظ کے لیے شواہد پر مبنی پالیسیاں اور قانون سازی کے لئے مشترکہ کوششوں کی اہمیت کواجاگر کیا۔تقریب سے خطاب میں ڈاکٹر ماہین ملک، ریجنل ڈائریکٹر برائے جنوبی ایشیا نے تمباکو کے استعمال کے سنگین نتائج کا احاطہ کیا۔ ملک عمران احمد، کنٹری ہیڈنے تمباکو کے مضر اثرات سے نمٹنے کے لیے اجتماعی کارروائی کی اہم اہمیت پر زور دیا۔اس موقع پر ملک بھر سے تعلق رکھنے والی مائو ں کے ایک گروپ نے بھی شرکت کی اور تمباکو نوشی اوردیگر مصنوعات کے استعمال کے عادی اپنے بچوں کے تجربات سے شرکا کو آگاہ کیا ۔